Hazrat Moosa (A.S) with MCQs


 حضرت موسی علیہ السلام

حضرت موسی علیہ السلام اللہ کے نبی ہیں اور آپ سے پہلے حضرت شیث اور نوح علیہ السلام نبی ہو گزرے ہیں ۔ اللہ نے حضرت موسی پر تورات نازل کی ۔ آپ آل عمران یعنی بنی اسرائیل کی طرف نبی بنا کر بھیجے گے ۔ آپ علیہ السلام کا ذکر مبارک نام کے ساتھ قرآن میں سب نبیوں سے زیادہ کیا گیا ہے ۔ قرآن پاک کی تیس سے زیادہ سورتوں میں ایک سو سے زائد مرتبہ حضرت موسی علیہ السلام, فرعون اور بنی اسرائیل کا ذکر کیا گیا ہے ۔ آپ کو بائبل میں موسیس کہا گیا ہے اور قرآن میں موسی, آپ علیہ السلام کو قرآن میں کلیم اللہ کا لقب دیا گیا ہے ۔

 

آپ کو فرعون کے دور میں نبی بنا کر بھیجا گیا ۔ تمام فرعونوں کو اپنی طاقت دولت اور بادشاہت پر گھمنڈ تھا اللہ نے حضرت موسی علیہ السلام کو فرعون کے محل میں اس کی بیوی کی گود میں پلوا کر اس کا غرور گھمنڈ چکنا چور کر دیا ۔ ایک دن فرعون کو کسی نجومی نے بتایا کہ اس کی سلطنت میں ایک ایسا لڑکا پیدا ہونے والا ہے جو اس کی شاہی کےلے کفر کےلے تباہی ثابت ہوگا ۔ یہ سنتے ہی فرعون نے تمام حاملہ عورتوں کے حمل ضائع کروا دیے اور زوج کو جماع سے منع کر دیا ۔ پھر بھی حکم ربانی سے حضرت موسی علیہ السلام عمران کے گھر پیدا ہوئے ۔ آپ کی والدہ نے فرعون کے ڈر سے آپ کو صندوق میں ڈال کر دریائے نیل کی لہروں کے سپرد کر دیا ۔ اسی اثنا فرعون کی بیوی نے اپنے محل سے چمکتے ہوئے صندوق کو دیکھ کر نوکروں کو بھیجا اور منگوا کر دیکھا تو حیران رہ گئ ۔ فرعون تک بات گئ تو اس نے کہا کہ اس لڑکے کو مار دینا چاہیے کہیں یہی میری تباہی کی وجہ نا بنے, لیکن حضرت آسیہ فرعون کی بیوی نے کہا نہیں نہیں ایسا نا کرو ہم اپنے محل میں اس کی پرورش کریں گے تو یہ تمہیں نقصان نہیں پہنچائے گا ۔ اس طرح حضرت موسی علیہ السلام کی پرورش فرعون کی گود میں ہوئ ۔ حضرت موسی علیہ السلام نے اپنی والدہ کا دودھ پینا ہی پسند کیا اور آپ کی والدہ ہی آپ کی دایا بن کر رہیں ۔ آپ کی والدہ کا نام قرآن میں موجود نہیں جب کہ والد کا نام لیا گیا ہے ۔ ان تمام باتوں کا ذکر قرآن کی سورۃ قصص کی آیات میں موجود ہے ۔ فرعون حضرت موسی کے شیریں لبوں سے حکمت کی باتیں سنا کرتا تھا اور آپ کو پیار بھی کرتا تھا جب آپ بیس سال کے ہوئے تو آپ کی شادی کر دی آپ کے دو بچے ہوئے ایک کا نام حرتون اور دوسرے کا نام بلقا تھا,  قرآن مجید میں اس شادی کا ذکر نہیں ہے یہ اسرائیلی روایات سے ماخذ ہے ۔ آپ تیس سال فرعون کے محل میں رہے اور پھر مدین شہر کی طرف ہجرت کی ۔ وہاں حضرت شعیب علیہ السلام سے ملے۔

 

جب حضرت موسی علیہ السلام جوان ہوئے تو اللہ نے آپ کو نبوت عطا کی ۔ اس سے پہلے ہوا کچھ یوں کہ آپ شہر سے باہر نکلے تو دیکھا دو آدمی آپس میں لڑ رہے ہیں ایک قبطی اور ایک اسرائیلی, قبطی فرعون کے باورچی خانے کا انچارج تھا اور اسرائیلی سے لکڑیوں کے معاملے پر لڑ رہا تھا آپ نے قبطی کو مکا مارا تو وہ مر گیا ۔ پھر آپ شہر مدین کی طرف آ نکلے ۔ قرآن میں ذکر ہے کہ :

"اور جب متوجہ ہوا موسی طرف مدین کے کہا نزدیک ہے پروردگار میرا یہ کہ دکھا دے مجھ کو راہ سیدھی"


 جب حضرت موسی علیہ السلام شہر مدین پہنچے تو دیکھا کہ کچھ لوگ اپنی بکریوں کو پانی پلا رہے ہیں اور دو لڑکیاں الگ کھڑی انتظار کر رہی ہیں ۔ آپ ان کے پاس گئے ان کی مدد کی کنویں کے پاس سے پتھر ہٹایا اور ان کی بکریوں کو پانی پلا کر جلد واپس کر دیا, جب یہ گھر پہنچی تو حضرت شعیب علیہ السلام نے پوچھا کہ آج جلد واپس کیسے آ گئ ہو؟ تو بچیوں نے سارا معاملہ کہہ سنایا آپ نے حضرت موسی کو بلایا اور گفتگو کی ۔ پھر حضرت موسی نے قبطی کی موت واقعہ کہہ سنایا اور آپ نے ان کو تسلی دی اور بیٹی نے سفارش کی کہ بابا اس مرد کو گھر میں نوکر رکھ لیتے ہیں, یہ زور آور اور امانتدار ہے ۔ پھر حضرت شعیب علیہ السلام نے کہا کہ میری بیٹی سے شادی کر لو اور رہو ہمارے ساتھ آٹھ سال, دس کر لو تو تمہاری مرضی, پھر دس سال بعد جب بیوی کو لے کر آنے لگے واپس تو راستے میں بیوی کا بچہ ہونے لگا آگ لینے گئے تو وہی اللہ نے نبوت عطا کی آپ اللہ کا نور دیکھ کر غش کھا گئے ۔


مصر آکر پھر تبلیغ شروع کی ۔ مصر کے لوگوں نے آپ کی نافرمانی کی ۔ بنی اسرائیل اور فرعون کی نافرمانیوں کا بہت زیادہ ذکر کیا گیا ہے قرآن پاک میں ۔ 


فرعون جب اپنی فوج لے کر آپ کے پیچھے نکلا تو اللہ نے اسے دریائے نیل میں غرق کر دیا اور حضرت موسی علیہ السلام کو نجات دی ۔ اللہ نے حضرت موسی علیہ السلام کو نو معجزے عطا کیے تھے ۔ 

1 عصا 

2 ید بیضا 

3 ٹڈی دل 

4 طوفان 

5 قمل  نامی نباتاتی آفت 

6 مینڈکوں کی کثرت 

7 خون 

8 خشک سالی 

9 پھلوں میں کمی 

ان سب کا قرآن پاک کی سورۃ الاعراف کی آیت نمبر 136 میں ذکر ہے ۔

Hazrat Moosa (A.S) with MCQs Hazrat Moosa (A.S) with MCQs Reviewed by Syed Daniyal Jafri on August 22, 2020 Rating: 5

No comments:

Powered by Blogger.