Britain Offer of August 1940

برطانیہ کو اگست 1940ءکی پیشکش۔



فرانس زوال کے بعد جنگِ عظیم  کی صورتِحال نٸے رخ میں بدل گٸ, کہ برطانیہ جنگ جاری رکھنے کے لیے تنہا رہ گیا تھا ہندوستان کی عوام ان کی اس کمزوری سے بہ خوبی واقف تھی برطانوی حکومت مساٸل کا شکار ہوگٸ اور ایسے میں انہیں سیاسی جماعتوں کے تعاون کی ضرورت پڑی  تاکہ جنگ کی ضروریات کی تکمیل ہوسکے۔


ایسے حالات میں واٸسراۓ لارڈ لنلتھ گوء نے ٨ اگست ١٩٤٠ میں حکومت کی جانب  سے پیشکش کی جسے اگست کی پیشک کے نام سے یاد کیا جاتا ہے۔  جس میں ہندوستان کے مساٸل کے عارضی حل تجویز کیا۔

١۔ گورنرجرنل کو انتظامی کونسل میں توسیع  اور ایک مشاورتی کونس کا قیام۔

٢۔ اقلیتوں کی حیثیت  کے تحفظ کی آٸندہ بننے والے آٸین میں فراہمی

٣۔ نٸے آٸین کی تیاری کا کام خود ہندوستانیوں کے سپرد کیا جاۓ گا اور ہندوستانی زندگی کے لیے معاشرتی, معاشی اور سیاسی ڈھانچہ کا تصور خود ہندوستانی تخلیق کریں گے

٤۔جنگ کے خاتمے کے بعد ایک نماٸندہ ہندوستانی تنظیم بناٸ جاۓ گی جوکہ ایک نیاآٸین بناۓ گی اور اس دوران  برطانوی حکومت اس آٸین ساز تنظیم پراتفاق کرے گی  اور آٸین سازی میں اس تنظیم کو آٸین کے اصولوں لے تعین میں ہر ممکنہ مدد فراہم کرے گی۔

٥۔ اس وقفہ میں برطانوی حکومت نے توقع ظاہرکی کہ تمام سیایس جماعتیں اور مذہبی فرقے ہندوستان کی جنگی جدوجہد میں اس کے ساتھ تعاون کریں گے۔


قاٸدِ اعظم نے ایک خطاب میں اگست پیشکش کے بارے میں بتایا کہ مسلم لیگ نے اسکواصولاََ  قبول کرلیا ہے۔ اگرچہ تفصیلات تسلّی  بخش نہیں۔کانگریس نے اس پیشکش کو مسترد کردیا۔

Britain Offer of August 1940  Britain Offer of August 1940 Reviewed by Syed Daniyal Jafri on September 04, 2020 Rating: 5

No comments:

Powered by Blogger.