Leave India Movement


 ہندوستان چھوڑ دو تحریک


ہندوٶں کے اقتدار پرقبضے کی خواہش یوں ظاہر ہوٸ اور گاندھی نے اس بات پرزور دینا شروع کردیا کہ اب انگریز اقتدار کانگریس کےحوالے کرکے ہندوستان چھوڑ دیں ۔

ان خیلات کو  آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے اجلاس میں 8 اگست 1942ء  کو ہندوستان چھوڑ دو تحریک کی صورت پیش کیا,اس تحیک کو منظور کرکے قرار داد پاس کی گٸ ۔

اس قرار داد میں کہا گیا کہ ہندوستان سےبرطانوی اقتدار اب ختم جانا چاہیے ,اور عدم تشدد کی بنیاد پر وسیع ترین عوامی جدوجہد کاآغاز کیا جاۓاور وسیع ترین جدوجہد نا گزیر طور پر گاندھی کی قیادت میں چلاٸ جاۓ,اس تحریک کو خود گاندھی نے کھلی بغاوت ہے کہا جوکہ کوٸ حکومت برداشت نہیں کرے گی۔

اس تحریک کے شروع ہونے کے بعد فسادات اور املاک کی لوٹ مار کا سلسلہ شروع ہوگیا ملک بدامنی کاشکار ہوگیا 

سرکاری ملازمین کو بلا امتیاز قتل کرنا شروع کردیا۔

جواب میں حکومت کابھی سخت ردِ عمل آیا 

 اور گاندھی سمیت مختلف کانگریسی لیڈران کوگرفتار کیاگیا اور کانگریس کمیٹی کو غیر قانونی قرار دیا گیا۔

مختلف سرکاری عمارتوں پر حملے کیے گۓ۔

دوسری سیاسی جماعتوں اور عوام کے ایک بڑے حصّے نے خود کو اس تحریک سے دور رکھا۔ قاٸدِ اعظم کی دور اندیشی گاندھی اور ہندوٶں کی اس تحریک کےپیچھے چھپے مقاصد بھانپ گی کہ یہ تحریک,  تحریکِ پاکستان کے لیے لوگوں کے جذبات ٹھنڈے کرنا چاہتے ہیں اور پورے ہندوستان پر ہندو راج قاٸم کرنا چاہتے ہیں۔

 اس لیے انہوں نے ہندوستان چھوڑدو  کے جواب میں تقسیم کرو  اور چھوڑ دو  کا اعلان کیا۔

Leave India Movement Leave India Movement Reviewed by Syed Daniyal Jafri on September 04, 2020 Rating: 5

No comments:

Powered by Blogger.